Meri Shairi Shab-o-Roz

Meri Shairi: Roag – Qitaa

Meri Shairi: Roag - Qitaa

Meri Shairi: Roag – Qitaa – waqt suraj log sanjog dil gham phool chehrey kaanta sarapa sifat

روگ – ایک قطعہ

وہ وقت بھی آتا ہے کہ سورج کی تپش میں لوگ!

ہو جاتے ہیں گم سراپا، کرتے ہیں سنجوگ!

پھر اے دل کیا غم کہ لوگ کانٹا صفت کہتے ہیں

پھول سے چہرے بھی تو دیتے ہیں عمر بھر کا روگ!

Meri Shairi: Roag – Qitaa

مسعودؔ

میری شاعری

اردو شاعری

Shab-o-roz

About the author

Masood

ایک پردیسی جو پردیس میں رہنے کے باوجود اپنے ملک سے بے پناہ محبت رکھتا ہے، اپنے ملک کی حالت پر سخت نالاں،۔ ایک پردسی جس کا قلم مشکل ترین سچائی لکھنے سے باز نہیں آتا، پردیسی جسکے قلم خونِ جگر کی روشنائی سے لکھتا ہے، یہی وجہ ہے کہ وہ تلخ ہے، ہضم مشکل سے ہوتی ہے، پردسی جو اپنے دل کا اظہار شاعری میں بھی کرتا ہے

Add Comment

Click here to post a comment