Archive - December 19, 2018

Meri Shairi Shab-o-Roz

Khilona

Khilona اُس نے پوچھا:   ’’اے جانِ ارجمند کون سا کھلونا ہے من پسند کھیلے ہوں جس سے عمر بھر بچپن سے لیکر جوانی تلک‘‘ میں نے سوچا اور غور کیا پہلو میں کسی نے شور...

Meri Shairi Shab-o-Roz

Asool

Asool انتظار سے بھر زندگی مجھے قبول ہے میرا وجود میرے غمخوار قدرت کی بھول ہے جس منزل پہ پہنچ کر مسافر پلٹ جائے اس منزل سے بہتر پاؤں کی دھول ہے دنیا کے گلشن میں...

Meri Shairi Shab-o-Roz

Muhabbat

Muhabbat راز اب مجھ پر فاش ہوا دل کی بے قراری کا دیکھ لو یہ حال زندگی، محبت کی ماری کا حالات کے تیروں کا نشانہ، دلِ ناداں کیوں؟ پیار کرنا تو جرم نہیں، پھر دشمن...

Pegham

FREE
VIEW