Meri Shairi Shab-o-Roz

Meri Shairi: Aey Dost

Meri Shairi: Aey Dost

Meri Shairi: Aey Dost

اے دوست!

آہوئے صیاد دیدہ ہے میرا دل اے دوست
تڑپ رہا ہے اک مدت سے یہ بسمل اے دوست

رات سے کالا کاجل‘ کاجل سے کالی زلفیں
اک حلقۂ بے قراری ہے اسکا کاجل اے دوست

دلیل سحر ہے شمع‘ جس پہ تکیہ ہے دلِ نامراد کا
اداس بیٹھا ہے یہ اور رنگ پہ ہے محفل اے دوست

اہلِ جنوں دشت و کہسار کو بھی محمل سمجھتے ہیں
بڑھا لیا ہے جنہوں نے قدم پائیں گے منزل اے دوست

تیرے دید کی طلب تختۂ دار تک لے آئی ہم کو
اب تو آجاؤ سامنے کہ نہ جائیں بے حاصل اے دوست

پھول تو نہیں اے جاناں‘ لہوِجگر حاضر ہے
کرو جو حکم تو سجا دیں اس سے تیرا محمل اے دوست

دل میں تیری صورت سجائے کیوں نہ اترائے مسعودؔ
خدا کرے کبھی نہ ہو تیری یاد سے غافل اے دوست

Aahu e siyaad deedah. Urdu Sad Poetry. Bismil. Dost. Urdu Shayeri. Kajal Urdu Poetry. Mefil Urdu Poetry. Phool Urdu Poetry.

Meri Shairi: Aey Dost

Shab-o-roz

About the author

Masood

ایک پردیسی جو پردیس میں رہنے کے باوجود اپنے ملک سے بے پناہ محبت رکھتا ہے، اپنے ملک کی حالت پر سخت نالاں،۔ ایک پردسی جس کا قلم مشکل ترین سچائی لکھنے سے باز نہیں آتا، پردیسی جسکے قلم خونِ جگر کی روشنائی سے لکھتا ہے، یہی وجہ ہے کہ وہ تلخ ہے، ہضم مشکل سے ہوتی ہے، پردسی جو اپنے دل کا اظہار شاعری میں بھی کرتا ہے

Add Comment

Click here to post a comment