Music Shair-o-Naghma

Aik Shair Aik Naghma: Tera Shehar aur Main Musafir

Aik Shair Aik Naghma: Tera Shehar aur Main Musafir

ایک شعر

ہوئی ہے رات تو آنکھوں میں بس گیا پھر تو
کہاں گیا ہے میرے شہر کے مسافر تو
فرازؔ تو نے اسے مشکلوں میں ڈال دیا
زمانہ صاحبِ زر اور فقط شاعر تو

ایک نغمہ

About the author

Masood

ایک پردیسی جو پردیس میں رہنے کے باوجود اپنے ملک سے بے پناہ محبت رکھتا ہے، اپنے ملک کی حالت پر سخت نالاں،۔ ایک پردسی جس کا قلم مشکل ترین سچائی لکھنے سے باز نہیں آتا، پردیسی جسکے قلم خونِ جگر کی روشنائی سے لکھتا ہے، یہی وجہ ہے کہ وہ تلخ ہے، ہضم مشکل سے ہوتی ہے، پردسی جو اپنے دل کا اظہار شاعری میں بھی کرتا ہے

Add Comment

Click here to post a comment