Meri Shairi Shab-o-Roz

Meri Shaairi: Ehad

Meri Shaairi: Ehad
Ehad

Meri Shaairi: Ehad

عہد

Meri Shaairi: Ehad

قسم خدا کی یہ دنیا کب ہم کو جدا کر سکتی ہے
انساں کو بس محبت ہی وصلِ خدا کر سکتی ہے

نام ہے تیرا ہونٹوں کی زینت،یہ زینت کبھی کم نہ ہوگی
میں نے کی ہے تجھ سے محبت، یہ الفت کبھی کم نہ ہوگی
تو ہی میری تنہائی کا ساتھی، تو ہی میرا ہمراہی
تیرا حسن ہے پیار کی منزل، میرا عشق ہے راہی
حق میں ہمارے بددعا ہی پاگل دنیا کر سکتی ہے

روزِ اوّل سے میرے دل میں تیری ہی صورت، تیری ہی مورت
میں نے بنایا ہے تجھ کو قسمت، تو ہی بنا لے مجھ کو قسمت
عہدِوفا ہے تجھ سے ساجن، تو ہی بنی میرے پیار کی جنت
پیار کا وعدہ تجھ سے کیا ہے، تو ہی ہے میرے پیار کی عزت
مجھ کو اپنے دل میں چھپا لو، کب زندگی وفا کر سکتی ہے

قسم خدا کی یہ دنیا کب ہم کو جدا کر سکتی ہے
انساں کو بس محبت ہی وصلِ خدا کر سکتی ہے

Shab-o-roz
Image of Shab-o-Roz

About the author

Masood

ایک پردیسی جو پردیس میں رہنے کے باوجود اپنے ملک سے بے پناہ محبت رکھتا ہے، اپنے ملک کی حالت پر سخت نالاں،۔ ایک پردسی جس کا قلم مشکل ترین سچائی لکھنے سے باز نہیں آتا، پردیسی جسکے قلم خونِ جگر کی روشنائی سے لکھتا ہے، یہی وجہ ہے کہ وہ تلخ ہے، ہضم مشکل سے ہوتی ہے، پردسی جو اپنے دل کا اظہار شاعری میں بھی کرتا ہے

Add Comment

Click here to post a comment