Meri Shairi Shab-o-Roz

Meri Shaairi: Mera Qasoor Kya Hai?

Meri Shaairi: Mera Qasoor Kya Hai?

Meri Shaairi: Mera Qasoor Kya Hai?

میرا قصور کیا ہے؟

منزل جدا جدا ہے، تقدیر خفا خفا ہے
قسمت بنانے والے، میں تجھ سے پوچھتا ہوں
میرا قصور کیا ہے؟

اک ستارہ ٹوٹا ہے کسی دل کے آسماں کا
وہ ستارہ بن گیا ہے اک کھلونا جہاں کا
دنیا بنانے والے میں تجھ سے پوچھتا ہوں
میرا قصور کیا ہے؟

ٹھکرایا ہوا ہوں، میں جہانِ فانی کا
تنکوں سے کمتر ہے، مول زندگانی کا
زندگی دینے والے میں تجھ سے پوچھتا ہوں
میرا قصور کیا ہے؟

گلہ تجھ سے کیا ہے، دنیا نے کافر کہا
تو ہی بتا دے مجھے، ہو گا آخر کیا
آخرت بنانے والے میں تجھ سے پوچھتا ہوں
میرا قصور کیا ہے؟

منزل جدا جدا ہے، تقدیر خفا خفا ہے
قسمت بنانے والے میں تجھ سے پوچھتا ہوں
میرا قصور کیا ہے؟

مسعود

Meri Shaairi: Mera Qasoor Kya Hai?

Shab-o-roz

About the author

Masood

ایک پردیسی جو پردیس میں رہنے کے باوجود اپنے ملک سے بے پناہ محبت رکھتا ہے، اپنے ملک کی حالت پر سخت نالاں،۔ ایک پردسی جس کا قلم مشکل ترین سچائی لکھنے سے باز نہیں آتا، پردیسی جسکے قلم خونِ جگر کی روشنائی سے لکھتا ہے، یہی وجہ ہے کہ وہ تلخ ہے، ہضم مشکل سے ہوتی ہے، پردسی جو اپنے دل کا اظہار شاعری میں بھی کرتا ہے

Add Comment

Click here to post a comment