Meri Shairi Shab-o-Roz

Meri Shaairi: Tera Khat

Meri Shaairi: Tera Khat
letter

Meri Shaairi: Tera Khat

تیرا خط

گوکہ ہم جانتے ہیں کہ خط تیرا نہ آئیگا

پر دل میں لیے اک آس ہم لینے ڈاک چلے

تیری محفل میں بن بلائے آئے تو یہ ہونا تھا

آج ہم کوچہ یار سے لیے دل صد چاک چلے

تیری اس ادا کو بیرخی کہوں یا مذاق تقدیر

ناسازگار حالات ہیں کہ ہم ہو کے خاک چلے

حسن لازوال ہے کہ عشق لازوال مسعودؔ

حسن دنیا سے ڈر ڈر کے چلا عشق والے بیباک چلے

مسعودؔ

urdu romantic poetry, khat urdu poetry, sanam khat, love letter.

Shab-o-roz

About the author

Masood

ایک پردیسی جو پردیس میں رہنے کے باوجود اپنے ملک سے بے پناہ محبت رکھتا ہے، اپنے ملک کی حالت پر سخت نالاں،۔ ایک پردسی جس کا قلم مشکل ترین سچائی لکھنے سے باز نہیں آتا، پردیسی جسکے قلم خونِ جگر کی روشنائی سے لکھتا ہے، یہی وجہ ہے کہ وہ تلخ ہے، ہضم مشکل سے ہوتی ہے، پردسی جو اپنے دل کا اظہار شاعری میں بھی کرتا ہے

Add Comment

Click here to post a comment