Current Affairs News

Saudi Crown Prince visits Pakistan

Saudi Crown Prince visits Pakistan

سعودی والی عہد کا دورۂ پاکستان  – نیا دور

دورۂ پاکستان

وزیرِاعظم عمران خان کی مثبت خارجہ پالیسیوں کی بدولت سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان اپنے 1000 ہزار کے قریب اہم ترین دستے کے ساتھ آج پاکستان پہنچے۔

اس ملاقات کا ایک اہم رخ دوطرفہ معاملات کو مضبوط کرنے اور پاکستان میں عمران خان کی زیرِ قیادت جو سرمایہ کاری کے نئے نئے مواقع نکل رہے ہیں ان سے فائدہ اٹھانا ہے۔ اسی کے تحت 20 بیلین ڈالر کے معاہدوں پر دستخط ہو چکے ہیں۔

ولی عہد محمد بن سلمان اتوار کی شام اسلام آبار پہنچے جہاں پر وزیراعظم عمران خان نےان کا استقبال کیا۔ 21 توپوں کی سلامی دی گئی۔ عمران خان نے خود ولی عہد کو ائیرپورٹ سے ڈرائیو کرتے ہوئے وزیراعظم ہاؤس لیکر گئے۔

ولی عہد کے ساتھ اعلیٰ سطح کا بزنس مین طبقہ، کیبنٹ ممبز اور منسٹرز بھی تھے۔ 

پریس کانفرنس

” ہم نے 20 بیلین ڈالر کی ڈیل مکمل کی ہے جو کہ آنے والے دنوں میں مزید بڑھتی جائے گی” – ولی عہد نے ایک پریس کانفرنس میں کہا۔ ” ہمیں یقین ہے کہ پاکستان آنے والے دنوں میں بہت اہم اور خاص ملک کے روپ میں سامنے آئے گا اور ہم یہ یقین دلانے چاھتے ہیں کہ ہم اسکا ایک حصہ بننا چاھتے ہیں” – ولی عہد نے مزید کہا۔

چین کے صدر ژی جیانپنگ کے بعد یہ دوسرا بڑا دورہ ہے اور چین نے اپنے دورے کے بعد پاکستن میں بہت بڑی انویسٹمنٹ شروع کی اسی طرح اب سعودی عرب بھی پاکستان میں بہت بڑی اور اہم انویسٹمنٹ کرنا چاھتا ہے۔

Saudi Crown Prince visits Pakistan

سرمایہ کاری

اگر سعودی انویسٹمنٹ کی شرع بڑھتی ہے تو پاکستان مستقبل قریب میں ایک مضبوط معاشی ملک کے طور پر سامنے آئے گا۔ عنقریب سعودی عرب کیساتھ ساتھ دوسرے ممالک بھی پاکستان مین سرمایہ کاری کا سوچیں گے۔  مگر پاکستان کو ایک مضبوط اور خوددار قیادت کی ضرورت ہے جو کہ عمران خان کی صورت ہی میں ہو سکتی ہے۔ عمران خان پاکستان کو اس مشکل وقت سے نکالنے کے لیے پرعزم ہے اور جب کپتان اپنے عزم پر آتا ہے تو وہ کر دکھاتا ہے۔ پاکستان کی اپوزیشن ہر ممکن طور پر ملک مین خرابی پیدا کریگی کیونکہ وہ جانتے ہیں اگر عمران خان پاکستان کو معاشی بحران سے نکالنے میں کامیاب ہو گیا، تو اپوزیشن کا کردار پھیکا پڑ جائے گا۔

SC orders 500 Buildings in Karachi to raze

About the author

Masood

ایک پردیسی جو پردیس میں رہنے کے باوجود اپنے ملک سے بے پناہ محبت رکھتا ہے، اپنے ملک کی حالت پر سخت نالاں،۔ ایک پردسی جس کا قلم مشکل ترین سچائی لکھنے سے باز نہیں آتا، پردیسی جسکے قلم خونِ جگر کی روشنائی سے لکھتا ہے، یہی وجہ ہے کہ وہ تلخ ہے، ہضم مشکل سے ہوتی ہے، پردسی جو اپنے دل کا اظہار شاعری میں بھی کرتا ہے

Add Comment

Click here to post a comment