Celebrities Entertainment

Roohi Bano Passes Away

Roohi Bani Passes Away
Roohi Bano Passes Away

پاکستان ٹیلویژن کی مشہور، نامور، ورسٹائل اور ہردل عزیز اداکارہ روحی بانو آج وفات پا گئیں۔

Roohi Bano Passes Away

روحی بانو نے ایک ممتاز خاندان میں جنم لیا۔ انکے والد مشہورِ زمانہ طبلہ نواز استاد اللہ رکھا قریشی تھے۔ روحی بانو کے بھائیوں میں بھی اعلیٰ سطح کے فنکار پیدا ہوئے ۔ استاد ذاکر حسین طبلہ نواز، توفیق قریشی، فضل قریشی سبھی اعلیٰ سطح کے طبلہ نواز اور موسیقار تھے اور ہندوستانی فنونِ لطیفہ میں اعلیٰ مقام رکھتے ہیں۔

روحی بانو 10 اگست 1951 کو کراچی میں پیدا ہوئیں۔ وہ ایک عرصہ سے بیماری میں مبتلا تھیں اور ترکی میں زیرِ علاج تھیں۔

روحی بانو نے پی ٹی وی پر اداکاری کا آغاز اسوقت کیا جب وہ لاہور گورنمنٹ کالج سے نفسیات میں ایم ایس سی کر رہی تھی۔ روحی بانو ایک کوئز پروگرام میں شرکت کی کہ انہیں فاروق ضمیر نے ڈرامہ آفر کیا۔

روحی بانو کے مشہورِ زمانہ ڈراموں میں قلعہ کہانی، زردگلاب، حیرتکدہ، دروازہ، کرن کہانی  اور بہت سارے دوسرے ڈامے شامل ہیں۔

روحی بانو نے فلموں میں کام کیا ہے مگر ان کی شناخت ٹی وی سے ہے۔

SC orders 500 Buildings in Karachi to raze

Roohi Bani Passes Away

About the author

Masood

ایک پردیسی جو پردیس میں رہنے کے باوجود اپنے ملک سے بے پناہ محبت رکھتا ہے، اپنے ملک کی حالت پر سخت نالاں ہے۔ ایک پردیسی جس کا قلم مشکل ترین سچائی لکھنے سے باز نہیں آتا، پردیسی جسکا قلم اس وقت لکھتا ہے دل درد کی شدت سے خون گشتہ ہو جاتا ہے اور اسکے خونِ جگر کی روشنائی سے لکھا ہوئے الفاظ وہ تلخ سچائی پر مبنی ہوتے ہیں جو ہضم مشکل سے ہوتے ہیں۔۔۔ مگر یہ دیوانہ سچائی کا زہر الگنے سے باز نہیں آتا!

Add Comment

Click here to post a comment

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Pegham Network

FREE
VIEW