Meri Pasand

میری آنکھوں کو سوجھتا ہی نہیں

میری آنکھوں کو سوجھتا ہی نہیں
یا مقدر میں راستہ ہی نہیں

پھر وہی شام ہے وہی ہم ہیں
ہاں مگر دل میں حوصلہ ہی نہیں

وہ بھرے شہر میں کسی سے بھی
میرے بارے میں پوچھتا ہی نہیں

میں تو اس کی تلاش میں گم ھوں
وہ کبھی مجھ کو ڈھونڈتا ہی نہیں

کوشش کے باوجود بھی تو بھولتا نہیں
تیرے بغیر کیا کروں کچھ سوجھتا ہی نہیں

ہوتی ہے صبح و شام مگر اس کے باوجود
ہے چاند تیری یاد کا جو ڈوبتا ہی نہیں

About the author

hadya

Add Comment

Click here to post a comment