Meri Tehreerein Shab-o-Roz

Meri Tehreer: Chhoti Chhoti Khushiyan

Meri Tehreer: Chhoti Chhoti Khushiyan
Meri Tehreer: Chhoti Chhoti Khushiyan

چھوٹی چھوٹی خوشیاں

Meri Tehreer: Chhoti Chhoti Khushiyan
ہم لوگ اکثر بڑی بڑی خوشیوں کے پیچھے بھاگتے رہتے ہیں، ایک ہی بار میں سب کچھ حاصل کر لینا چاہتے ہیں۔
انسان کی یہی کشمکش مایوسیوں کو جنم دیتی ہے، جہاں زندگی بے معنی ہونا شروع ہوجاتی ہے۔
ایک دم سے سب کچھ حاصل نہیں کر لیا جاتا، زندگی قدم بہ قدم چلنے کا نام ہے۔
چھوٹے چھوٹے خاکوں کو ملا کر زندگی کی تصویر میں رنگ بھرے جاتے ہیں۔
بڑی بڑی سوچوں کو چھوڑ کرا گر ہم چھوٹی چھوٹی خوشیوں کو اکٹھا کرنا شروع کردیں تو زندگی یکدم حسین لگنے لگے۔
اگر تمہاری مسکراہٹ سے کسی کی زندگی میں بہار آسکتی ہے تو اُسے مسکرا کر دیکھ لے۔
جب تمہاری دسترس میں ہو تو معاف کردینا سب سے بڑا صدقہ ہوتا ہے، یہی دوسرے انسان کی زندگی کی بہت بڑی خوشی بن سکتا ہے۔
اور پھریہی سے زندگی کی تلخیاں ختم ہونا شروع ہو جاتی ہیں، زندگی کی بہاریں واپس آنا شروع ہوجاتی ہیں۔
زندگی اللہ تعالیٰ کابہت بڑا احسان ہے۔ اِسے تلخیوں کی بھینٹ نہیں چڑھا دینا چاہیے۔
درگزر کرنے سے جو خوشی ملتی ہے اُس بنیاد بنا کرآگے بڑھنا چاہیے زندگی بہت حسین بن جاتی ہے!
چھوٹی چھوٹی خوشیوں کو چننا شروع کردیں، اللہ کی نصرت ایسے لوگوں کے ساتھ ہوتی ہے۔
مسعودؔ

About the author

Masood

ایک پردیسی جو پردیس میں رہنے کے باوجود اپنے ملک سے بے پناہ محبت رکھتا ہے، اپنے ملک کی حالت پر سخت نالاں،۔ ایک پردسی جس کا قلم مشکل ترین سچائی لکھنے سے باز نہیں آتا، پردیسی جسکے قلم خونِ جگر کی روشنائی سے لکھتا ہے، یہی وجہ ہے کہ وہ تلخ ہے، ہضم مشکل سے ہوتی ہے، پردسی جو اپنے دل کا اظہار شاعری میں بھی کرتا ہے

Add Comment

Click here to post a comment