فسف Geet: Sharab'Noshi ~ Pegham Network
Meri Shairi Shab-o-Roz

Geet: Sharab’Noshi

Geet: Sharab'Noshi

Geet: Sharab’Noshi

شراب نوشی

آنکھوں میں مستی چھائے‘ دل بھی ڈوبا جائے
یہ کیا ہوا ہے مجھ کو کچھ سمجھ نہ آئے

میں تو نہ چاہتا تھا کہ پیوں شراب کو
دیکھا جو لیکن ان کے شباب کو
میں تشے میں جھوم گیا قدم لڑکھڑائے

خمارِ نشہ میں‘ میں سب کچھ بھول گیا ہوں
یاد تھا جو مجھ کو وہ میں سب کچھ بھول گیا ہوں
یہ کیسا نشہ ہے کوئی مجھ کو بتائے

پوچھتے ہو کیوں کی ہے میں نے شراب نوشی
چھوڑ گئی ہے مجھے جب سے میری نوشی
میں نے شرابی بن کر غم دنیا کے بھلائے

Geet: Sharab’Noshi

Shab-o-roz

About the author

Masood

ایک پردیسی جو پردیس میں رہنے کے باوجود اپنے ملک سے بے پناہ محبت رکھتا ہے، اپنے ملک کی حالت پر سخت نالاں،۔ ایک پردسی جس کا قلم مشکل ترین سچائی لکھنے سے باز نہیں آتا، پردیسی جسکے قلم خونِ جگر کی روشنائی سے لکھتا ہے، یہی وجہ ہے کہ وہ تلخ ہے، ہضم مشکل سے ہوتی ہے، پردسی جو اپنے دل کا اظہار شاعری میں بھی کرتا ہے

Add Comment

Click here to post a comment

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.