Current Affairs Meri Tehreerein Politics

Current Affairs: Ab Kissey Rehnuma Karey Koi

Osama bin Laden
Osama bin Laden

اب کسے رہنما کرے کوئی

امریکی صدارتی انتخابات سے چند روز پہلے اوسامہ بن لادن کی ویڈیو کا منظرِ عام پر آنا کس بات کی غمازی کرتا ہے؟ کچھ باتیں جو ذہن میں ایک عرصہ سے جنم لے رہی تھیں، وہ مثبت ہوتی جارہی ہیں۔آئیے پہلے کچھ سوالوں پر نظر ڈالتے ہیں:

 

*کیا ویڈیو میں وہ اوسامہ ہی تھا یا کوئی اور؟
*عراق پر قیامت گذر گئی اوسامہ کے بیانات ناپید رہے، اچانک اُسے کیا خیال آیا بیان دینے کا؟
*کیا اوسامہ ان بیانات کا نتیجہ جانتا ہے؟

 

بش کو اپنی صدارتی مہم میں ایک turning point کی ضرورت تھی۔ ایک ایسے شوشے کی ضرورت تھی جس سے امریکی عوام خوف زدہ ہو کر بش کو دوبارہ صدر چن لیں۔ یہ شوشہ اوسامہ کی ویڈیو فلم کی صورت میں وارد ہوا ہے۔امریکی عوام میں خوف کی ایک لہر دوڑ گئی ہے کہ اوسامہ زندہ ہے اور بش ہی ہے جو ’دہشت گردی‘ کی یہ جنگ لڑ سکتاہے۔

سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ اوسامہ کو کیا ضرورت تھی ایک ایسے موقعہ پر جب ایک مدت سے وہ غائب تھا، جس مدت میں عراق پر قیامت گذرگئی، بیان کیوں دیا ہے؟؟ مجھے ذاتی طور پر اس بات پر کامل یقین ہے کہ اوسامہ امریکہ کی پناہ میں ہے اور بش کے کہنے پر بیان بازی کرتا رہتا ہے۔اگر یوں نہیں تو پھر میرے نذدیک اوسامہ ایک انتہائی جاہل انسان ہے جو ایسے حالات میں آکر بیان بازی کرے،جہاں دنیا کے حالات میں امریکی انتخابات کے بعد تبدیلی رونما ہوسکتی ہے۔جہاں تک کاروائی کرنے کا تعلق ہے تو وہ بش کو وارننگ دے کر کاروائی کرے گا؟ کبھی کسی دہشت گرد نے یہ بتا کرکاروئی کی ہے کہ وہ اگلی کاروائی کب اور کہاں کرسکتا ہے؟ اوسامہ کا یوں ویڈیو ریلیز کرناسراسر اس بات کی غمازی کرتاہے کہ یہ بش کے کہنے پر کیا گیا ہے اور اوسامہ بھی اس انٹرنیشنل گینگ کا رکن ہے۔

کیا عراق پر ہونی والی قیامت اوسامہ کے لیے کوئی اہمیت نہیں رکھتی تھی جواُ س نے ان حالات میں بیان نہیں دیاتھا اور اب اچانک منظرِ عام پر آگیا ہے۔ ایک دوسری بات جس پر مجھے یقین ہوتا جا رہا ہے کہ الجزیرہ ٹیلیوژن کے پیچھے بھی امریکہ کا ہاتھ ہے۔ ورنہ کیا وجہ ہے کہ مسلمان عقل سے اس قدر مفلوج ہوچکے ہیں کہ وہ حالات کی نزاکت کوسمجھے بغیر ایسی جاہلانہ ویڈیو نشر کردے یہ جانے بغیر کے اس کا کیا نتیجہ ہوگا؟؟؟؟

مسلمان اوسامہ کو اپنا ہیرو مانتے ہیں، کیا مسلمان اپنی سوچ سے اس قدر مفلوج ہوچکے ہیں کہ وہ ان سازشوں کو سمجھ نہیں پاتے؟یہ سیاسی سازشوں کا ایک ایسا جال ہے جسے بڑی بڑی مکڑیاں مل کر بنتی ہیں۔ایسے میں ہم لوگ کسے لیڈر مانیں؟؟کو ن ہے جو ہماری کمزور اور ناتواں قوم کے بکھر ے ہوئے شیرازے کو سمیٹے؟؟ ۔ شاید فی الحال کوئی نہیں، مستقبل تباہ نظر آرہا ہے اور اس کا سارے کا سارا دوش مسلمان نام نہاد لیڈروں کو جاتا ہے، اوسامہ سمیت!!!

کیا کِیا خضر نے سکندر سے

اب کسے رہنما کرے کوئی
بقلم: مسعودؔ – یکم نومبر 2004

About the author

Masood

ایک پردیسی جو پردیس میں رہنے کے باوجود اپنے ملک سے بے پناہ محبت رکھتا ہے، اپنے ملک کی حالت پر سخت نالاں،۔ ایک پردسی جس کا قلم مشکل ترین سچائی لکھنے سے باز نہیں آتا، پردیسی جسکے قلم خونِ جگر کی روشنائی سے لکھتا ہے، یہی وجہ ہے کہ وہ تلخ ہے، ہضم مشکل سے ہوتی ہے، پردسی جو اپنے دل کا اظہار شاعری میں بھی کرتا ہے

Add Comment

Click here to post a comment